زمرہ کے بغیر

جزیرہ امن برائے مہاجرین شام و عراق

صبح کرنا شام کا، لانا ہے جوۓ شیر کا

مصری ارب پتی صاحب نے بحیرہ روم کا جزیرہ امن خرید کر شامی مہاجرین کو کیا دیا، تعمیراتی کمپنیوں کی چاندی ہو گئی –

شامی مہاجرین کا جم غفیر یورپ کی دھلیز پر۔

کورین، آسٹریلوی اور سویڈش فرموں نے فوری ٹینڈر جمع کروائے – اقوام متحدہ کی خاص کمیٹی برائے شامی مہاجرین نے ٹھیکے جاری کر دئیے – اماراتی اور سعودی اور قطری صاحبان ثروت نے دل کھول کر چندے دیئے- مہینوں میں ایک دس مربع کلومیٹر بے آباد جزیرے پر، جس پر کبھی سکندر اعظم کی بحری فوج مشقیں کرتی تھیں، پچاس منزلہ عمارتیں کھڑی کر دی گئیں۔ پہلے کوئی بھلا سا نام ہوتا ہو گا – ملالہ یوسفزئی نے نام جزیرہ امن تجویز کیا۔

آسٹریلیا کی وزارت داخلہ نے اپنے خاص ماہرین روانہ کئے تا کہ جزیرہ کے گرد باڑ لگا کر اس کو محفوظ بنایا جاسکے۔ ان کو ان معاملات میں خاص تجربہ حاصل ہے۔

مہاجرین کو…

View original post 868 more words

Advertisements

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s